62

2020تک پاکستان دنیا کا تیسرا سب سے زیادہ ایٹم بم رکهنے والا ملک بن جاے گا

image

اسلام آباد (اے این این)جرمن میڈیانے دعویٰ کیا ہے کہ جوہری ہتھیا روں میں تخفیف کے مطالبات کے باوجود یہ تعداد کم نہیں ہو رہی ، دنیا بھر میں اس وقت نو ممالک کے پاس قریب سولہ ہزار تین سوایٹم بم ہیں۔ کس ملک کے پاس کتنے جوہری ہتھیار موجود ہیں؟ اس حوالے سے ”وائس آف جرمنی“ کی طرف سے جاری رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اسٹاک ہوم انٹر نیشنل پیش ریسرچ انسٹیٹیوٹ(سِپری) کے مطابق جوہر ی ہتھیاروںکی تعداد کے معاملے میں روس سب سے آگے ہے۔ سابق سوویت یونین نے اپنی طرف سے پہلی بار ایٹمی دھماکا 1949 میں کیا تھا۔ سابق سوویت یونین کی جانشین ریاست روس کے پس اس وقت آٹھ ہزار جہری ہتھیار موجود ہیں۔ رپورٹ کے مطابق اس حوالے سے دوسرا نمبر امریکہ کا ہے۔ 1945 میں پہلی بار جوہری تجربے کے کچھ ہی عرصے بعد امریکا نے جاپانی شہروں ہیروشیما اور ناگا ساکی پر ایٹمی حملے کیے تھے۔ سِپری کے مطابق امریکا کے پاس آج بھی 7300 ایٹم بم ہیں۔ یورپ میں سب سے زیادہ جوہری ہتھیار فرانس کے پاس ہیں۔ ان کی تعداد 300 بتائی جاتی ہے۔ فرانس نے1960 میں ایٹم بم بنانے کی ٹیکنالوجی حاصل کی تھی۔ ایشیا کی اقتصادی سپر پاور اور دنیاکی سب سے بڑی بری فوج والے ملک چین کی حقیقی فوجی طاقت کے بارے میں بہت واضح معلومات نہیں ہیں۔
پاکستان کے پاس 100 سے 110 ایٹی میزایل اور بهارت کے پاس 90 سے 100 جوہری ہتهیار ہیں اور کہا جا رہا ہے ک پاکستان 2020 تک اپنے جہری ہتهیار 350 تک کر لے جس کے بعد پاکستان دنیا کا تیسرا ملک بن جائے گا اس حبر کی پاکستانی حکام نے تردید کی کے وہ اپنے جہری ہتهیار نہیں بڑہا رہے.

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں